doctar_naeem

امارت اسلامیہ کی سیاسی پالیسی: دشمن حواس باختہ ہوا

آج کی بات

دشمن نے سرتوڑ کوششیں کیں کہ امارت اسلامیہ کو دہشت گرد تنظیم ثابت کرے ، دنیا، علاقائی اور پڑوسی ممالک کو اس سے ڈرائے اور اس کے خلاف ان کے ساتھ ہر ممکن تعاون کرے لیکن دنیا اور خطے کے فعال سفارتکار ممالک نے غیر ملکی حملہ آوروں اور کابل حکومت کے پروپیگنڈے کو خاطر میں لائے بغیر امارت اسلامیہ کے ساتھ سیاسی تعلقات قائم کئے ۔

حال ہی میں چین، پاکستان اور روس کے درمیان ماسکو میں سہ فریقی اجلاس میں سلامتی کونسل سے کہا گیا کہ وہ امارت اسلامیہ کی قیادت پر پابندیاں ختم اور انہیں لیسٹ سے نکال دیں ، امارت اسلامیہ اس اعلامیہ کا خیر مقدم کرتی ہے اور دنیا پر واضح کرتی ہے کہ امارت اسلامیہ قابض استعماری قوتوں کے خلاف عوامی مزاحمت کی قیادت کر رہی ہے ، کسی ملک کے اندرونی معاملات میں مداخلت کرتی ہے اور نہ ہی کسی کو یہ اجازت دیتی ہے کہ وہ افغانستان میں مداخلت کرے ۔

کوئی بھی ملک  افغانستان کے اندرونی معاملات میں مداخلت کرے ، اپنے افغان ایجنٹوں کو ہتھیار اور رقم فراہم کرے  یا خود فوجی یلغار کرے ، امارت اسلامیہ اس کے خلاف عوامی مزاحمت کو منظم کرے گی اور اپنے ملک کا بھرپور دفاع کرکے اللہ تعالی کی مدد سے تاریخی شکست دے گی ۔

امارت اسلامیہ کا نصب العین افغانستان کی آزادی اور اسلامی نظام کا قیام ہے، امارت اسلامیہ افغانستان میں تمام برادر اقوام پر مشتمل مشترکہ گھر ہے ، یہاں نسلی، لسانی اور نسلی اختلافات کی کوئی گنجائش نہیں ہے ، اسلامی اقدار اور قومی مفادات کا تحفظ ، سیاسی بصیرت، اخلاص اور تجربہ ایسے معیار ہیں جن پر امارت اسلامیہ یقین رکھتی ہے اور اسی اعتماد کی بنیاد پر اپنے تمام فوجی اور سویلین اداروں میں معطلی اور نامزدگیوں کے معاملات سنبھال رکھے گی ۔

بین الاقوامی اور علاقائی ممالک افغانستان اور امارت اسلامیہ کے بارے میں غلط فہمی کا شکار نہ ہوں ، غیر ملی حملہ آوروں اور کابل حکومت کے پروپیگنڈے سے متاثر نہ ہو اس لئے امارت اسلامیہ کو چاہئے کہ بین الاقوامی اور علاقائی سطح پر اپنے سیاسی تعلقات اور سفارتی کوششوں کو مزید وسعت دے ، اپنا موقف دنیا کے سامنے رکھے اور اپنی پالیسی کی وضاحت کرے ۔

امارت اسلامیہ عسکری فتوحات، موثر سفارتکاری، سیاسی پیشرفت اور بین الاقوامی مقبولیت نے دشمن کو حواس باختہ کردیا ، قابض قوتوں اور کابل انتظامیہ نے سرتوڑ کوششیں کیں  کہ امارت اسلامیہ کو متنازع اور بدنام کریں لیکن امارت اسلامیہ کی فوجی طاقت، سیاسی افہام و تفہیم اور اسلام اور ملک کے عظیم مفادات پر سمجھوتہ نہ کرنے جیسے کامیاب پالیسی نے دشمن کے تمام منصوبوں کو تہس نہس کردیا اور اسلامی امارت خطے اور دنیا میں ایک فوجی اور سیاسی طاقت اور قومی تحریک کے طور پر سامنے آیا ۔

 

اضف رد

لن يتم نشر البريد الإلكتروني . الحقول المطلوبة مشار لها بـ *

*